صرف چند منٹ میں دل کے دورے اور سرطان کی تشخیص کرنے والا آلہ

Spread the love

گلاسگو: 

آپ نے اسٹار ٹریک فلم میں مختلف امراض کی شناخت اور علاج کرنے والے چھوٹے دستی پلیٹ فارم دیکھے ہوں گے جنہیں ٹرائی کورڈر کا نام دیا گیا ہے۔ اسی طرز پر سائنس دانوں نے ایک چھوٹا آلہ بنایا ہے جو خون اور دیگر مائعات کے نمونوں میں کینسر اور ہارٹ اٹیک کے بایو مارکرز شناخت کرسکتا ہے۔

بایو سینسر اور بایو الیکٹرانکس جرنل میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق یونیورسٹی آف گلاسگو نے ہاتھوں میں سمانے والا ایک آلہ بنایا ہے جو کئی بیماریوں کی فوری شناخت میں مدد دے سکتا ہے۔ اسے ملٹی کورڈر کا نام دیا گیا ہے جس کے ذریعے ڈاکٹر کسی بھی جگہ سے مرض کی موجودگی اور بڑھنے کو نوٹ کرسکتے ہیں جن میں کینسر اور سرطان بھی شامل ہیں۔

اس آلے کی جان ایک چپ ہے جسے کمپلیمنٹری میٹل آکسائیڈ سیمی کنڈکٹر (سی ایم اوز) سے بنایا گیا ہے جو کیمروں میں عام پائی جاتی ہیں لیکن انہیں ہر طرح کی تصویر کشی کے سینسر میں بدلا جاسکتا ہے۔ اس آلے میں ری ایکشن کے چار خانے ہیں جو پیشاب اور خون وغیرہ میں بیماریوں کی خبر دینے والے اجزا کا پتا لگاتے ہیں جن سے ڈاکٹر فوری طور پر مرض کا اندازہ لگاسکتے ہیں۔

تحقیق سے وابستہ مرکزی سائنس داں سمدھن پٹیل نے کہا ہے کہ ان کا تیار کردہ آلہ ایک وقت میں کئی امراض کی شناخت کرسکتا ہے جبکہ یہ مرض میں اضافے اور اس کے درجے کو بھی بھانپ سکتا ہے۔

ماہرین نے اعتراف کیا ہے کہ انہیں یہ آلہ بنانے کا خیال اسٹار ٹریک فلم دیکھ کر ہی آیا تاہم یہ اینڈروئڈ ٹیبلٹس اور اسمارٹ فون سے جڑ کر نتائج ظاہر کرتا ہے۔ مائیکرو یو ایس بی سے جڑ کر چارج ہونے والا یہ آلہ ایک ہاتھ میں باآسانی سما سکتا ہے۔ اس سے مرض کی تشخیص میں انقلاب آجائے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

0 Comments
scroll to top